291

آئی ایس او پاکستان کے بانی رہنما شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی کی 25 برسی کا آج دوسرا روز ہے۔ دوسرے روز کی تقریبات کا آغاز شہید کے مزار پر سکاوٹ سلامی سے ہوا۔ اس موقع پر مرکزی صدر عارف حسین جانی، سابق مرکزی صدر اور مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل سید ناصر عباس شیرازی، علامہ مہدی کاظمی ، امامیہ چیف سکاوٹ محمد عباس رضا سمیت علمائے کرام نے شرکت کی۔ امامیہ سکاوٹس کے چاک و چوبند دستے نے سلامی پیش کی اور تقریب کے مہمانوں کو سکارف پہنائے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مرکزی صدر آئی ایس او پاکستان عارف حسین جانی نے کہا کہ

شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی آج 25 سال بعد بھی ہمارے درمیان زندہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شہید کی فکر اتنی اعلیٰ ہے کہ آج بھی نوجوانوں کی رہنمائی و رہبری کا فریضہ سرانجام دے رہی ہے، یہی وجہ ہے کہ آج ملک کے گوش و کنار سے نواجوان اپنے روحانی رشتے میں بندھے یہاں علی رضا آباد پہنچے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شہید کی برسی کے موقع پر ہم عہد کرتے ہیں کہ ان کے افکار کو زندہ رکھیں گے اور ان کی دی ہوئی اس امانت کو آنے والی نسلوں تک پہنچائیں گے۔ سابق مرکزی صدر آئی ایس او پاکستان سید ناصر عباس شیرازی نے کہا کہ شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی ایک شخص نہیں بلکہ پوری تنظیم تھے، جنہوں نے اپنی زندگی آئی ایس او کی آبیاری اور دین اسلام کی سربلندی کیلئے وقف کر رکھی تھی۔

انہوں نے کہا کہ شہید کے پیغام کو زندہ رکھنا ہماری ذمہ داری ہے جس ہم نبھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ شہید نے آئی ایس او کی شکل میں آنے والی نسلوں کو ایک عظیم تحفہ دیا ہے، آج آئی ایس او پاکستان کے فارغ التحصیل عہدیدار دنیا بھر میں انسانیت کی خدمت میں مصروف عمل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شہید کو خراج عقیدت پیش کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ ان کے افکار اور ان کے دیئے گئے خط پر عمل کیا جائے۔ اس موقع پر سکاوٹس کے دستے نے مزارِ شہید پر پھول چڑھائے اور معزز مہمانوں کے ہمراہ فاتحہ خوانی کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں