99

گڑھ مہاراجہ میں کھاد کی بلیک میں فروخت کا دھندہ عروج پر سابق کونسلر نے بلیک میں کھاد کی فروخت کو رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔ سابق کونسلر میونسپل کمیٹی گڑھ مہاراجہ اور معروف زمیندارچوہدری عبدالستار جٹ نے بتایا ہے کہ تھانہ گڑھ مہاراجہ کے سامنے ملک طاہر اور ملک آصف اعوان کھاد کی بوریوں کی ان کوڈنگ کروارہے تھے میں نے جب چھ بوریوں کا تقاضا کیا تو آصف نے فی بوری 2600روپے طلب کئے جبکہ میں نے اس سے بحث کی کہ حکومت کا مقررکردہ ریٹ تو 2250روپے ہے جس پر

گڑھ مہاراجہ میں کھاد کی بلیک میں فروخت کا دھندہ عروج پر سابق کونسلر نے بلیک میں کھاد کی فروخت کو رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔ سابق کونسلر میونسپل کمیٹی گڑھ مہاراجہ اور معروف زمیندارچوہدری عبدالستار جٹ نے بتایا ہے کہ تھانہ گڑھ مہاراجہ کے سامنے ملک طاہر اور ملک آصف اعوان کھاد کی بوریوں کی ان کوڈنگ کروارہے تھے میں نے جب چھ بوریوں کا تقاضا کیا تو آصف نے فی بوری 2600روپے طلب کئے جبکہ میں نے اس سے بحث کی کہ حکومت کا مقررکردہ ریٹ تو 2250روپے ہے جس پر مذکورہ کھاد ڈیلر آپے سے باہر ہوگیا اور کھاد کی بوریاں دینے سے انکاری ہوگیا اور دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ سرکاری ریٹ پر جہاں سے ملتی ہے لے لو ہمارے پاس نہیں ہے ۔چویدری عبدالستار جٹ نے کہا کہ کھاد مافیا دونوں ہاتھوں سے کسانوں کو صرف لوٹ ہی نہیں رہا بلکہ ان کا استحصال بھی کررہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کھاد کی بلیک میں فروخت دھڑلے سے جاری ہے ۔انہوں نے حکام بالا سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ کھاد بلیک میں فروخت کرنے والوں کا کڑا محاسبہ کرکے کاشتکاروں کو معاشی قتل سے بچایا جائے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں