61

بھارتی ریاست اتراکھنڈ میں اگلے ماہ ہونے والے الیکشن سے قبل بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف اور سابقہ آرمی چیف بپن راوت کے بھائی کرنل (ر) وجے راوت نے اتراکھنڈ کے وزیر اعلیٰ کی موجودگی میں بھارتیہ جنتا پارٹی میں شمولیت اختیار کرلی اور امکان ہے کہ وہ اگلے ماہ

بھارتی ریاست اتراکھنڈ میں اگلے ماہ ہونے والے الیکشن سے قبل بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف اور سابقہ آرمی چیف بپن راوت کے بھائی کرنل (ر) وجے راوت نے اتراکھنڈ کے وزیر اعلیٰ کی موجودگی میں بھارتیہ جنتا پارٹی میں شمولیت اختیار کرلی اور امکان ہے کہ وہ اگلے ماہ اتراکھنڈ میں ہونے والے الیکشنز میں امیدوار کے طور پر لڑیں…
یاد رکھیں کہ اگلے ماہ بھارت کی 5 ریاستوں میں الیکشن ہونے ہیں جو کہ 2024 کے الیکشنز کا فیصلہ کر دیں گے کہ بھارتی جنتا پارٹی اگلے الیکشن 2024 میں حکومت بنا پائے گی یا نہیں. اس لیے بھارتی جنتا پارٹی ان الیکشنز میں کسی بھی صورت کامیاب ہونا چاہتی ہے.

دیگر کئی وجوہات کے ساتھ ساتھ شاید اسی سبب بھی بپن راوت کو قربانی کا بکرا بنایا گیا تاکہ انکی لاش پہ ووٹ مانگے جاسکیں کیونکہ انکی زندگی میں یہ ممکن نہیں تھا کہ انکا بھائی بی جے پی کا حصہ بنتا، الیکشن لڑتا اور جنرل راوت سی ڈی ایس رہتے اور اگر انہیں ہٹایا جاتا تو یہ بھی بی جے پی کا ووٹ بینک تقسیم کر دیتا کیونکہ بپن راوت کا خاندان ہمیشہ سے بی جے پی سے جڑا رہا ہے…
یاد رہے کہ بپن راوت تامل ناڈو میں ایک متنازعہ ہیلی کاپٹر حادثے میں مارے گئے جس کے بعد بھارت میں ایک نئی بحث چھڑ گئی تھی حال ہی میں تحقیقات رپورٹ سامنے آئی ہے جس میں حادثے کا سارا مدعا موسم اور پائلٹ پہ ڈال کر قصہ ختم کر دیا گیا ہے.

#انوکھاسپاہی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں