34

تعلیمی اداروں میں “ڈانس ” کے احکامات جاری،،، تعلیم کا شعبہ این جی اوز کے رحم و کرم پر آ گیا رپورٹ :اعجاز علی چشتی تفصیلات کے لیے لنک پر کلک کریں

تعلیمی اداروں میں “ڈانس ” کے احکامات جاری،،،
تعلیم کا شعبہ این جی اوز کے رحم و کرم پر آ گیا
رپورٹ :اعجاز علی چشتی
وزارت تعلیم بھی تعلیم کے نام پر ڈانس پارٹیوں کا حصہ بن گئی ،وفاقی نظامت تعلیمات کو غیر سرکاری تنظیم یونیسکو کے کہنے پر ڈانس مقابلے کروانے کا نوٹفکیشن جاری کر دیا گیا،25 مئی کو افریقہ ڈے پر ایجوکیشن ڈانس ریلیز کرنے کا اعلان کیا گیا ہے، جاری نوٹفکیشن میں کہا گیا ہے کہ تمام تعلیمی ادارے بچیوں اور بچوں سے ڈانس پرفارم کروائیں اور ان کی ویڈیو شئیر کریں نوٹیفکیشن وفاقی وزارت تعلیم و پروفیشنل ٹریننگ ،پاکستان نیشنل کمیشن فار یونیسکو کی جانب سے جاری کیا گیا ہے،اسکے بعد دوسرا نوٹفکیشن 2 اپریل کو حکومت کی طرف سے جاری کیا گیا جس میں کہا گیا کہ 25 مئی کو تعلیمی اداروں میں ڈانس والے نوٹفکیشن پر عملدرآمد کیا جائے،
نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ تمام تعلیمی ادارے بچیوں اور بچوں سے ڈانس پرفارم کروائیں اور ان کی ویڈیوز سوشل میڈیا پرشیئر کریں،اسلامی اقدار سے متصادم نوٹیفکیشن کے اجرا ءپر والدین شدید تشویش میں مبتلا ہیں،نوٹفکیشن سامنے آیا تو سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر بھی صارفین نے احتجاج کیا، وہیں اسلام آباد میں تعلیمی اداروں میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبا و طالبات کے والدین کا کہنا ہے کہ وفاقی نظامت تعلیمات کا نوٹیفکیشن ہماری اقدار اور دینی احکامات کا مذاق اڑانے کے مترادف ہے، ڈانس کی تعلیم کے لئے ہمارے بچے سکول نہیں جاتے ، جس کو بچوں‌کو ڈانس سکھانی ہے وہ ڈانس اکیڈمی میں‌داخل کروا دے، زبردستی ڈانس حکومت ہمارے بچوں پر مسلط نہیں کر سکتی، آئین پاکستان سکولوں میں قران اور دین کی تعلیم کو لازمی قرار دیتا ہے۔انہوں نے حکومت سے فوری نوٹس لے کر نوٹیفکیشن منسوخ کرانے کا مطالبہ کیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں